زندگی!گفتگونمبر16۔۔۔2جون2019

زندگی __ گفتگو نمبر :16
دوستو!
رمضان المبارک کو الوداع کہتے ہوئے تشکر کی ساعتوں کے ساتھ عید کا موقع آہی گیا ہے. وقت جو گزر گیا اس پر شکر اور جو آنے والا ہے اس سے اچھی امیدیں لگائ جائیں.
میں نے بھی ہمیشہ شکر اور محبت کو اپنے ساتھ جوڑے رکھا،شکر کا جذبہ الَلَّہ رَب اُلعِزّت کے نزدیک بہت مقبول ہے مگر جس طرح ہم شکر کرتے ہیں اس میں راستی کم اور اداکاری زیادہ ہوتی ہے، عام مشاہدہ ہے کسی کے حال پوچھنے پر جس طرح ٹھنڈی آہ بھر کر جواب ملتا ہے اس سے سمجھ نہیں آتا کہ یہ شکرانہ کلمات ہیں یا شکایت کا ڈھنڈورا، ہمارے اس کِذب پر پاک پروردگار کو بھی ہنسی آجاتی ہوگی.
ہم سب کچھ ہوتے ہوئے بھی آہ و فغاں کا مظاہرہ کررہے ہوتے ہیں ہم چیزوں کو صحیح برتنا نہیں جانتے، اپنی حدوں سے واقف نہیں اگر ہوتے تو فریاد کی بجائے شکر کررہے ہوتے.
آپ کو مالک نے دل دیا ہے جو محبت کرنا جانتا ہے جس کی محبتوں کی سیمائیں بہت وسیع ہیں، جو دینے اور سخاوت کے جذبہ سے سرشار ہے، اس کا دستور عطا ہے مگر آپ کسی نہ کسی طرح اس سے جھوٹ بول کر اسے سمیٹ دیتے ہیں دل کی دھڑکن کو پابند بنالیتے ہیں جبکہ خوشی تو ماں کے لمس، بچے کی مسکان، راہ گیر کو سڑک پار کرانے پر ہے پھر اسے کن چیزوں میں الجھا رکھا ہے، ان سچی خوشی کو نظر انداز کر کے دیو ہیکل شادمانی کے پیچھے سرکرداں ہیں جو کہ عارضی مسرت کے سوا کچھ بھی نہیں، وقت گزرنے پر ان کا احساس بھی ختم ہوجاتا ہے.
الَلَّہ پاک نے آپ کو ذہن دیا ہے جو منطق اور دلائل کے ساتھ مسئلے حل کرسکتا ہے مگر ہم اسے استعمال کرنے کے بجائے دوسروں سے رہنمائی چاہتے ہیں، آپ کا دماغ آپ کو ترجیح دیتا ہے لیکن آپ دوسروں کو برتری دیکر اپنی زندگی کی لگام اپنے ہی ہاتھ سے انہیں تھما دیتے ہیں.جس کے نتیجہ میں آپ خود بے اعتمادی کا شکار ہو کر زندگی سے شکوہ کرتے ہیں.
تو جناب ذرا اپنا جائزہ تو لیجئے __ اگر آپ بھی ایسا کرتے ہیں تو پلیز توقف کیجئے، اپنی زندگی پر بھرپور نظر ڈالئے کہ الَلَّہ کی جو نعمتیں آپ کو ملی ہیں کیا آپ ان کا صحیح استعمال کررہے ہیں اور ان کے لیے سچے دل سے شکر گزار ہیں، اپنے وجود کی حیثیت مانتے ہوئے اپنی ذمہ داریاں قبول کرتے ہیں یا اپنی کم مائیگی کو لیکر دوسروں کے آگے کھڑے ہیں اپنے مسائل کے حل کے لیے.
یاد رکھئے نعمتوں کا درست استعمال بھی اسلوب ِ شکرانہ ہے اور دماغ بھی ان نعمتوں میں سے ایک بیش بہا عطیہ ہے .
پھر کیا سمجھے!!!

از رضیہ سبحان
2-6-19

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top